Ghum Hai Ya Khushi Hai Tu - Nasir Kazmi

 

Ghum hai ya khushi hai tu, Meri zindagi hai tu

Aafato'n k daur mein, Chain ki gharri hai tu

Meri raat ka charagh, Meri neend bhi hai tu

Mein khiza'n ki shaam hoon, Rut bahaar ki hai tu

Dosto'n k darmiyan, Wajha-e-Dosti hai tu

Meri sari umr mein, Aik hi kami hai tu

Mein to wo nahi raha, Haan magar wohi hai tu

'Nasir' is dayaar mein, kitna ajnabi hai tu. . !

Poet : 'Nasir Kazmi'

 

Taken from 'Jaras'

Abhi Laut Aa Mery Gumshuda - Sad Urdu Poetry

Abhi Waqt Hai, Abhi Sans Hai, Abhi Laut Aa Mery Gumshuda

Mujhy Naaz hai mery zabt par, mujhy phir rula mery gumshuda

 

Ye nahin k tery firaaq mein, mein ujarr gaya ya bikhar gaya

Haan! Mohabbato'n pe jo maan tha, wo nahi raha mery gumshuda

 

Mujhy ilm hai k tu chaand hai kisi aur ka, magar aik pal

Mery aasman-e-hayaat pe zara muskura mery gumshuda

 

Tery altafaat ki baarishain, Jo meri nahi to bata mujhy

Tery dasht-e-chah mein kis liye, mera dil jala mery gumshuda?

 

Ghanay jangalo'n mein ghira hoon mein, Barra Ghup andhera hai chaar soo

Koi aik charaagh to jal uthay. . Zara muskura mery gumshuda. . . !

 

 

ابھی وقت ہے، ابھی سانس ہے، ابھی لوٹ آ میرے گمشدہ

مجھے ناز ہے میرے ضبط پہ، مجھے پھر رُلا میرے گمشدہ

 

یہ نہیں کہ تیرے فراق میں، میں اجڑ گیا یا بکھر گیا

ہاں محبتوں پہ جو مان تھا، وہ نہیں رہا میرے گمشدہ

 

مجھے علم ہے کہ تُو چاند ہے کسی اور کا مگر ایک پَل

میرے آسمانِ حیات پہ ذرا مسکرا میرے گمشدہ

 

تیرے التفات کی بارشیں، جو میری نہیں تو بتا مجھے

تیرے دشتِ چاہ میں کِس لئیے میرا دِل جلا میرے گمشدہ؟

 

گھنے جنگلوں میں گِھرا ہوں میں، بڑا گُھپ اندھیرا ہے چار سُو

کوئی ِایک چراغ تو جل اُٹھے۔ ۔ ذرا مسکرا میرے گمشدہ